Showing posts from 2018Show All
Ishq ka rogh hai Aankhon se nazar aata hai
Tanha nahi hoon mein
Chor is khushbo ko kia rakha hai is mein
Hazar chehre hajum e duniya
Woh Namazon Main Duaon Ke Wazefon Jaisa
دل کے ساز پہ گا نہ سکے
غم کے سائے اگر نہیں ہوتے
Kahin dikhai na de kash chorne wala
کہیں دکھائی نہ دے کاش چھوڑنے والا
دُھوپ چھاؤں میں کدُورت کیوں ہے
Dene Aai Hai Mere Dard Ki Qeemat Mujh Ko
دینے آئی ہے میرے درد کی قیمت مجھ کو
Bhala Barish Sey Kiya Sairaab Ho Ga
بھلا بارش سے کیا سراب ھوگا
Haye Woh Log Jinhein Hum Ne Bhula Rakha Hai
ہاے وہ لوگ جنھیں ہم نے بھولا رکھا ہے
Aao Kuch Dair December Ki Dhoop Mein Baithen
آؤ کچھ دیر دسمبر کی دھوپ میں بیٹھیں
Teri yaad ki barafbari ka mosam
تری یاد کی برف باری کا موسم
Hamesha dair kar deta hoon main
Khizaan Ki Rut Main Gulaab Lehja
دسمبر آ گیا ہے اب قسم سے یاد مت آنا
دسمبر کی شب آخر نہ پوچھو کس طرح گزری
December ki shab e akhir na pocho kis tarhan guzri
December aa gaya hai ab qasam se yaad mat aana
Wo durd ko ankhon se guzarne nahi deta
Khyal e Yar maen Mujh ko Yunhi Madhosh rehne do
Mere Rashk E Qamar Tu Ne Pehli Nazar
Kyun kisi aur ko dukh dard sunaun apne
Eid ka din hai so kamre mein para hun aslam
Tu ne Acha kiya auqaat main rakha howa hai
Nazron se apni aap he girtay gaye hum
Halat e haal ke sabab halat e haal hi gayi
ھمیشہ دیر کر دیتا ھوں میں